طنز

Just love the way of tanz – “طنز” the poet says in this verse

سلیقہ ہی نہیں شاید اسے محسوس کرنے کا
جو کہتا ہے خدا ہے تو نظر آنا ضروری ہے

Here is the full poetry;

اصولوں پر جہاں آنچ ہے ٹکرانا ضروری ہے
جو زندہ ہوں تو پھر زندہ نظر آنا ضروری ہے

نئی عمروں کی خود مختاریوں کو کون سمجھاے
کہاں سے بچ کر چلنا ہیں کہاں جانا ضروری ہے

تھکے ہارے پرندے جب بسیرے کے لیے لوٹیں
سلیقہ مند شاخوں کا لچک جانا ضروری ہے

بہت بیباک آنکھوں میں تعلق تک نہیں پاتا
محبّت میں کشش رکھنے کو شرمانا ضروری ہے

سلیقہ ہی نہیں شاید اسے محسوس کرنے کا
جو کہتا ہے خدا ہے تو نظر آنا ضروری ہے

میرے ہونٹوں پر اپنی پیاس رکھ دو اور پھر سوچو
کہ اس کے بعد بھی دنیا میں کچھ پانا ضروری ہے

وسیم بریلوی

تُو میرا حوصلہ تو دیکھ، داد تو دے کہ اب مجھے
شوقِ کمال بھی نہیں، خوفِ زوال بھی نہیں


جو گزاری نہ جا سکی ہم سے

ہم نے وہ زندگی گزاری ہے

Advertisements

~ by UTS on November 12, 2010.

Leave a Reply

Fill in your details below or click an icon to log in:

WordPress.com Logo

You are commenting using your WordPress.com account. Log Out / Change )

Twitter picture

You are commenting using your Twitter account. Log Out / Change )

Facebook photo

You are commenting using your Facebook account. Log Out / Change )

Google+ photo

You are commenting using your Google+ account. Log Out / Change )

Connecting to %s

 
%d bloggers like this: