اُسکو چھٹی نہ ملی جس کو سبق یاد ہوا

busy days, no time for blogging…

اس میں کوئی شک نہیں کہ فطری طور ہر انسان صنف مخالف کی کشش محسوس کرتا ہے لیکن لوگ خامہ خا اسی کفیت یا کشش کو پیار، محبت اور عشق کا نام دیتے ہیں ۔کم از کم مجھے تو ایسی کسی کیفیت کو پیار، محبت اور عشق کا نام دینا علمی کج فہمی، جزبات اور تعلق کی فلاسفی سے عدم واقفیت اورٹھاٹھے مارتے سمندر کو مٹھی میں قید کرنے کی کوشش معلوم ہوتی ہے۔ لیکن کج فہمی ہو یا فلاسفی یہ کہنا بھی حق بجانب ہے کہ محبوب کا بچھڑنا اور زندگی تنہا گزارنے کا ارادہ ، دنیا کے تمام دکھوں سے بڑھ کہ تکلیف دہ ہے**۔ تب اسے مکتبِ عشق کا نرالا دستور یاد آتا ہے۔ جیسے مومن خان مومن نے کہا:

مکتبِ عشق کا ہے مومن نرالا دستور
اُسکو چھٹی نہ ملی جس کو سبق یاد ہوا***

چھٹی مل ہی جاتی ہے۔ تو نہیں اور سہی، اور نہیں اور سہی۔۔۔۔ یہی دنیا کا دستور ہے۔

اگر عقل سلیم ہو تو یہ بات سمجھنا مشکل نہیں کہ عشق مجازی بھی ہوتا، حقیقی بھی، کم بھی ہوتا اور زیادہ بھی اور گھٹتا بھی ہے اور بڑھتا بھی۔ مجازی عشق کی کچھ حدود ہوتی ہیں لیکن حقیقی تمام حدود قیود سے آزادہی رہتا ہے۔ دنیا میں بہت کم لوگ ہوتے ہیں جوواقعی کسی سے پیار، محبت اور عشق کرنے لگتے ہیں اور زندگی تنہا گزار دیتے ہیں، لیکن ایسے لوگ تو آٹے میں نمک کے برابر ہوتے ہیں جو مجازی سے حقیقی اور حقیقی سے مجازی عشق کا سفر کرتے ہیں پھر یہ عشق وہ نہیں ہوتا جس پر غالب کہ اٹھے کہ

بلبل کے کاروبار پہ ہیں خندا ہائے گل
کہتے ہیں جسے عشق وہ خلل ہے دماغ کا

 

 

 

 

 

*** مکتب عشق کا دستور نرالا دیکھا
اس کو چوٹی نہ ملی جس نے سبق یاد کیا

** ہو سکتا ہے کہ سبھی قارئین ہم س اتفاق نہ کریں، لیکن ایسا ہمارا خیال ہے .

 


Advertisements

~ by UTS on January 26, 2011.

One Response to “اُسکو چھٹی نہ ملی جس کو سبق یاد ہوا”

  1. کافی گھمبیر مسئلہ ہے۔ اتنی آسانی سے سمجھ آنے والا نہیں۔

Leave a Reply

Fill in your details below or click an icon to log in:

WordPress.com Logo

You are commenting using your WordPress.com account. Log Out / Change )

Twitter picture

You are commenting using your Twitter account. Log Out / Change )

Facebook photo

You are commenting using your Facebook account. Log Out / Change )

Google+ photo

You are commenting using your Google+ account. Log Out / Change )

Connecting to %s

 
%d bloggers like this: